بی جے پی عہدیداروں کے بیانات قابل مذمت، پاکستان اہم شراکت دار ہے: امریکا

نیویارک:امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کہا ہے کہ نئی پاکستانی حکومت کے نمائندوں سے ملنے کے چند مواقع ملے ہیں اور گزشتہ ماہ بلنکن بلاول ملاقات میں پہلی بار اچھی اور تعمیری بات چیت ہوئی، پاکستان خطےمیں اہم شراکت دارہے اور باہمی تعلقات کو مزید آگے بڑھا رہے ہیں۔

ترجمان امریکی محکمہ خارجہ نے میڈیا بریفنگ کے دوران بھارت میں بی جے پی سرکار کی جانب سے مسلمانوں کے گھروں کو گرائے جانے کی مذمت کی۔

نیڈ پرائس نے کہا کہ ہم بی جے پی کے 2 رہنماؤں کی جانب سے نبی کریم ﷺ سے متعلق گستاخانہ بیانات کی مذمت کرتےہیں، ہمیں توقع ہے کہ بھارت کی حکومت انسانی حقوق کا احترام کرے گی، امریکا اس سلسلے میں بھارت کی حوصلہ افزائی کرے گا۔

ترجمان امریکی محکمہ خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ انسانی وقار، مساوی مواقع اور آزادی مذہب کا احترام کیا جانا چاہئیے، یہ کسی بھی جمہوریت میں یہ اقدار بنیادی اہمیت رکھتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ خوشی ہوئی کہ پارٹی نے عوامی طور پر ان تبصروں کی مذمت کی، ہم مذہبی یا عقیدے کی آزادی سمیت انسانی حقوق کےمسائل پرسینئر سطح پر انگیج رہتے ہیں، ہم بھارت کو انسانی حقوق کے احترام کو فروغ دینےکی ترغیب دیتے ہیں۔

نیڈپرائس کا کہنا تھا کہ ہر ملک روس کے ساتھ مختلف تعلقات رکھتا ہے اور دیگر ممالک ماسکو کے ساتھ اپنے تعلقات کو نئی شکل دیتے ہیں، یہ بتدریج عمل ہے، روس کے ساتھ بھارت کے تعلقات کئی دہائیوں کے دوران استوار ہوئے، روس سے تیل کی خریداری پر بھارتی شراکت داروں سے متعدد بات چیت کی ہے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ ہمیں نئی پاکستانی حکومت کے نمائندوں سے ملنےکے چند مواقع ملے ہیں، گزشتہ ماہ بلنکن کو پاکستانی ہم منصب سے ملنے کا موقع ملا، پہلی بار یہ بہت اچھی اور تعمیری بات چیت تھی، ملاقات میں غذائی تحفظ کے مسئلے سمیت تمام مسائل پربات ہوئی۔

نیڈ پرائس نے مزید کہا کہ پاکستان ہمارا شراکت دار ہے، ہم اس شراکت داری کو آگے بڑھانے کےطریقے تلاش کریں گے۔

یہ بھی چیک کریں

پرچون فروشوں کو کب ٹیکس نیٹ میں لایا جائیگا، آئی ایم ایف نے ایف بی آر سے ٹائم فریم مانگ لیا

اسلام آباد: بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف …