اگر دوحہ معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی تو سخت ردعمل دیں گے: ترجمان افغان طالبان

دوحہ: قطر میں طالبان کے دفتر کے ترجمان سہیل شاہین نے کہا ہے کہ دوحہ معاہدے کی خلاف ورزی ہوئی تو سخت ردعمل دیں گے، تمام غیر ملکی فوجیوں کو مقرر کردہ تاریخ تک افغانستان سے جانا ہو گا۔ 

تفصیلات کے مطابق برطانوی نشریاتی ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے سہیل شاہین کا کہنا تھا کہ تمام غیر ملکی فوجیوں کو مقررہ تاریخ تک افغانستان سے جانا ہو گا ورنہ ردعمل دیں گے، انخلاءکے بعد فوجی کنٹریکٹرز سمیت تمام غیر ملکی افواج کو افغانستان میں نہیں رہنا چاہیے لیکن اگر دوحہ معاہدے کی خلاف ورزی ہوئی تو کیسے آگے بڑھنا ہے یہ طالبان قیادت فیصلہ کرے گی۔

ترجمان طالبان کا کہنا تھا کہ ہم سفارتخانوں، این جی اوز اور ان میں کام کرنے والوں کے خلاف نہیں بلکہ ہم غیر ملکی فوجی قوتوں کے خلاف ہیں، ہم سفارتخانوں، این جی اوز اور ان میں کام کرنے والوں کیلئے رکاوٹ نہیں بنیں گے۔

یہ بھی چیک کریں

پرچون فروشوں کو کب ٹیکس نیٹ میں لایا جائیگا، آئی ایم ایف نے ایف بی آر سے ٹائم فریم مانگ لیا

اسلام آباد: بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف …